272

حمد باری تعالیٰ

( سعید گرگانوی )
خود ہی فرما کے جلوہ آرائی
بن گیا آپ ہی تماشائی
کیا کرے کوئی خامہ فرسائی
کیا لکھے کوئی وصفِ دانائی
ذات ہے تیری لاشریک لہٗ
اے سراپائے حسن ویکتائی
تیرے جلوؤں کی شان دیکھ سکوں
بخش دے مجھ کو بھی وہ بینائی
وہ کسی غیر کا نہیں محتاج
جس کی ہے آپ سے شناسائی
حاصلِ صد ہزار نعمت ہے
ایک تیری التفات فرمائی
فرض ہر حال میں ہے ذکر ترا
ناتوانی ہو یا توانائی
حمد تیری سعید کیوں نہ کرے
تونے بخشی ہے عقل و دانائی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں